عباس Dec 4
یہ تعلق بھی بہت خوب رہا ہے کچھ دن تُو میرے نام سے منسوب رہا ہے کچھ دن آنکھ رو رو کے تیری راہ تکا کرتی تھی، دل تیری یاد سے مغلوب رہا ہے کچھ دن تیری تسبیح بنا کر تجھے سوچا کرنا، مشغلہ یہ میرا مرغوب رہا ہےکچھ دن