Nouman Shakir 23 May 18
سوچا تھا ہم نے وہ بہت ٹوٹ کر چاہیں گے بھی ہم نے بھی ہم نے اور بھی ہم گئے.،،،