Twitter | Search | |
Search Refresh
عباس 18h
پامال کر کے پوچھتے ہیں کس ادا سے وہ اس دل میں آگ تھی مرے تلوے جھلس گئے
Reply Retweet Like
عباس 18h
پھر خیالوں میں ترے قُرب کی خوشبو جاگی پھر برسنے لگی آنکھیں مری ، بادل کی طرح
Reply Retweet Like
عباس 18h
اُسے خِراجِ محبت ادا کرُونگا ضرور ذرا میں یاد تو کر لُوں کـوئی وفا اُس کی
Reply Retweet Like
عباس Dec 4
اب کے یہ سوچ کے بیمار پڑے ہیں کہ ہمیں ٹھیک ہونا ہی نہیں تیری عیادت کے بغیر
Reply Retweet Like
عباس 18h
اس نے دیوار پہ مٹی کا دیا کیا رکھا روشنی مجھ کو بلانے مرے گھر تک آئی
Reply Retweet Like
عباس Nov 30
شکوہ کریں تو کس سے کہ اے زخمِ نارسا ہر شخص ہم سے کھیلا بڑے احترام سے اے دردِ ہجر ہم سے مُحَبتـــــــــ سے پیش آ ہم نے تجھے بھی جھیلا بڑے احترام سے
Reply Retweet Like
عباس Dec 4
تم کو معلوم سہی , مجھ کو تو معلوم نہیں درد جب لطف کی منزل سے , گزر جاتا ھے نہ دلاسوں سے بہلتا ھے , تڑپتا ھُوا دل نہ نگاھوں کو کسی طور , قرار آتا ھے.
Reply Retweet Like
عباس 18h
اک مسافر کہ جسے تیری طلب ہے کب سے احتراماً تیرے کوچے سے گزرتا بھی نہیں
Reply Retweet Like
KAMRAN RAJA Nov 27
شام ...... بچپن میں آیا کرتی تھی..... اب تو صُبح سے رات هو جاتی هے.......!!
Reply Retweet Like
KAMRAN RAJA Nov 28
مُجھے معلوم ہے وہ لا حاصل ہے میرے لئے۔۔ اُسے معلوم ہے مُجھے عِشق ہُوا ہے اُس سے۔۔
Reply Retweet Like
عباس Dec 4
تیری الفت وصول ہو جیسے نعمتوں کا نزول ہو جیسے تُو مرے آسماں کا تارہ ہے دل تری رہ کی دھول ہو جیسے تیرے تابع ہی چلنے لگتا ہے وقت تیرا اصول ہو جیسے تیرا دیدار ہو رہا ہے مجھے میری منت قبول ہو جیسے حسرتوں سے الجھتی رہتی ہوں زندگانی ببول ہو جیسے
Reply Retweet Like
KAMRAN RAJA Dec 4
وہ میری کمزوری جانتے ہیں۔۔۔ _جو لیں وہ گردن کا بوسہ "💋 تو میری جان جاتی ہے _" 😘😍
Reply Retweet Like
عباس 18h
دشمنی مجھ سے کئے جا مگر اپنا بن کر جان لے لے مری صیاد مگر پیار کے ساتھ
Reply Retweet Like
عباس 18h
تو بھی اک دولتِ نایاب ہے ، پر کیا کہیے زندگی اور بھی کچھ تیرے سوا مانگے ہے
Reply Retweet Like
عباس 18h
آنکھوں سے لگایا ہے کبھی دستِ صبا کو ڈالی ہیں کبھی گردنِ مہتاب میں باہیں
Reply Retweet Like
عباس 18h
گمان نہ کر کہ مجھے جرأتِ سوال نہیں فقط یہ ڈر ہے تجھے لاجواب کر دوں گا
Reply Retweet Like
عباس Dec 4
نیند آئی نا رات بھر مجھکو خواب بیٹھے رہے قطاروں میں
Reply Retweet Like
عباس Dec 4
یہ تعلق بھی بہت خوب رہا ہے کچھ دن تُو میرے نام سے منسوب رہا ہے کچھ دن آنکھ رو رو کے تیری راہ تکا کرتی تھی، دل تیری یاد سے مغلوب رہا ہے کچھ دن تیری تسبیح بنا کر تجھے سوچا کرنا، مشغلہ یہ میرا مرغوب رہا ہےکچھ دن
Reply Retweet Like
KAMRAN RAJA Dec 3
ﮐَﻮﻥ ﮨَﻮﺗﺎ ﮨﮯﺍَﺏ ﻣَﻨﻈُﻮﺭِ ﻧَﻈَﺮ ﮐِﺲ ﮐَﯿﻠِﺌَﯿﮯ ﺍِﺣﺘﯿَﺎﻁ ﮐَﺮﺗﮯ ﮨﻮ ﮐﻮﻥ ﺭِﮨﺘﺎ ﮨﮯﺍَﺏ اندﺭُﻭﻥِ ﺩِﻝ ﮨَﻢ ﺳﮯ ﺟﻮ ﺍِﺟﺘَﻨﺎﺏ ﮐَﺮﺗﮯ ﮨﻮ!!!
Reply Retweet Like
عباس Dec 3
اس کے پاؤں نے رہ گذر چومی شرم سے لال ہو گیا رستہ
Reply Retweet Like